بھارت چین سے کتنا گبھر ایا ہوا ہے۔ اس کا اندازہ آپ کو اس خبر کے بعد بخوبی لگ جائے گا ۔ایک طرف سرحد پر چین نے بھارت کی راتوں کی نیند حرام کی ہوئی ہے۔ اور دوسری جانب بھارت کی رو س سے منتیں جاری ہیں۔ کہ چین بھارت کے درمیان تناؤ کو ختم کیا جائے۔ اور بھارتی وزیراعظم مودی سعودی عرب کو اپنی طرف کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ مودی نے گزشتہ دنوں سعودی بادشاہ کو فون کیا ۔اور ان کا حال چال دریافت کیا۔ اور کرونا وائرس کی بھارت میں تباہ کاریوں سے متعلق بھی بات چیت کی ۔واضح رہے کہ سعودی عرب سے حالیہ کچھ دنوں سے پاکستان کے حالات بہت خراب ہوگئے تھے۔ جب کہ اب ان میں پھر سے کافی گرم جوشی دیکھنے میں آ رہی ہے ۔لیکن کہا جا رہا ہے کہ تناؤ ابھی بھی موجود ہے ۔جس کی وجہ سے بھارت نے اس کا فائدہ اٹھانے کی کوشش کی ہے ۔جب کہ بھارت چین سے تناؤ کو ختم کرنے کے لیے بھی سعودی عرب سے درخواست کرسکتا ہے ۔واضح رہے کہ چین نے لداخ کا کافی حصہ اپنے کنٹرول میں لے لیا ہے۔ اور اب چین وہاں سے جانے کو تیار نہیں۔جب کے بھارت کے لیے یہ ایک شرمندگی سے کم نہیں ہوگا۔ اگر بھارت چین کے کنٹرول کو مان جاتا ہے ۔جنگ سے بھارت لداخ کو لے نہیں سکتا ۔بات چیت سے چین ما ن نہیں ر ہا ۔جو بھا ر ت کو شد ید د با ؤ میں لا ر ہے ہیں۔ جبکہ بھا ر ت کو یہ بھی ڈ ر ہے کہ ا گر جنگ میں بھا ر ت نے پہل کر د ی تو جو علا قہ بھا ر ت کے پا س ہے۔ بھا ر ت ا س سے بھی محر و م ہو سکتا ہے ۔