حدیث نبوی صلی اللہ علیہ وسلم ہے کہ اللہ کے کلام کو جملہ کلاموں پر ایسی ہی فضیلت حاصل ہے جیسے خود اللہ تعالی کو اپنی مخلوق پر ہے ۔ یہ بات ظاہر ہے کے جتنی بڑی جزات ہوتی ہے، اس لحاظ سے اسے وقعت دی جاتی ہے۔ دنیا کے لحاظ سے بھی دیکھا جائے تو کسی بھی دفتر وغیرہ میں جو باس ہوتا ہے ،اس بات کے وقعت زیادہ ہوتی ہے۔ ہر کوئی اس کی بات مانتا ہے ۔اور جیسے جیسے درجہ میں کم لوگ ہوں گے ان کی بات کو وقعت نہیں دی جائے گی ۔اور ملکی سطح پر دیکھا جائے تو وزیراعظم یا صدر کی بات زیادہ مستند ہوتی ہے ۔ قرآن پاک تو اللہ کا کلام ہے ۔اور اللہ کی ذات سب سے بڑی ذات ہے ۔جو بادشاہوں کا بادشاہ ہے ۔جو رب العالمین ہے ۔جو احکم الحاکمین ہے ۔ اس کی بات اور اس کے کلام کی کیا قیمت اور کیا فضیلت ہوگی ۔اس کو کون بیان کر سکتا ہے ۔جیسے اللہ کی عظمت بیان کرنا کسی کے بس میں نہیں ہیں ۔ایسے ہی اللہ کے کلام کی فضیلت اور برکت کوئی نہیں سمجھ سکتا ۔ آپ کے لیے وظیفہ لے کر آئے ہیں وہ وظیفہ اللہ کے کلام پاک سے ایک آیت کا وظیفہ ہے۔ بہت ہی مؤثر اور وظیفہ ہے ۔ وظیفہ قرآن پاک کی کون سی آیت کا ہے اور اس کا طریقہ کیا ہے؟ وظیفہ ہے ؛ یہ قرآن پاک کی سورت سورۃ المائدہ کی ایک آیت کا وظیفہ ہے ۔اس آیت کے وظیفے کے بارے میں بتانے سے پہلے آپ کو اس سورت کے بارے میں مختصرا بتاتے ہیں ۔ یہ سورۃ قرآن کی پانچھویں اور مدنی سورتوں میں سے ہے ۔جو چھٹے اور ساتویں بارے میں واقع ہے ۔ مائدہ کے معنی غذا یا دسترخوان کے ہیں۔ اس صورت میں حضرت عیسی علیہ السلام کے حواریوں کی درخواست پر آسمان سے مائدہ کے اترنے کا ذکر کیا گیا ہے ۔ اسی وجہ سے اس کا نام مائدہ رکھا گیا ہے ۔اس میں فقہی احکام جیسے حلال وحرام وضو اور تیمم کے بیان کے ساتھ ساتھ مختلف موضوعات پر بھی بحث ہوئی ہے۔ جن میں اسلام میں مسئلہ آیت مسیحیت میں تثلیث قیامت علامات وفاعہد عدالت عظمٰی عدالت کے ساتھ اور ان کے قتل کا حرام ہونا دوستو یہ تھی ۔ اب آپ کو آج کے وظیفے کے بارے میں بتاتے ہیں۔ یہ وظیفہ اٹھتے ساتھ ہی کرنا ہے۔اٹھنے کے بعد اگر وضو کر کے اس عمل کو کرنا چاہیے تو بہتر ہے۔ لیکن اس کے علاوہ کوئی اور کام آپ نے بالکل بھی نہیں کرنا ۔اس عمل کو اگر آپ کرلیں گے تو انشاء اللہ آپ کی جو بھی مالی ضروریات ہوں گی، وہ پوری ہوگی۔ آپ کو کسی کاروبار کیلئے پیسے چاہیے یا شادی کے لیے رقم چاہیے ۔یا کسی اور مسلے کے لیے آپ کو پیسے چاہیں ،تو اس عمل کو لازمی کریں۔ اور اس عمل کو قرض کی ادائیگی کے لئے بھی کر سکتے ہیں ۔ وظیفہ قرآن پاک کی ایک آیت کا عمل ہے صبح اٹھ کے ساتھ ہی آپ نے سورہ مائدہ کی آیت نمبر 114 کو گیارہ مرتبہ پڑھنا ہے ۔اور اس آیت کا ورد کرتے وقت آپ کی نظریں آسمان کی طرف ہو ۔اول وآخر ایک مرتبہ درود ابراہیمی کو لازمی پڑھیں۔ اللہ کے فضل و کرم سے آپ کو آپ کی مطلوبہ رقم ایک ہی دن میں مل جائے گی ۔یا پھر اس کے انتظام کی راہ آپ کے لئے ہموار ہوجائے گی۔ اور یاد رہے کہ اس عمل کو ایک دن یا تین دن یا سات دن تک ضرور کریں۔ جب آپ کی مالی ضروریات پوری ہو جائے گی تو آپ جتنا رزق مانگیں گے۔ اللہ اپنے فضل سے عطا کریں گے ۔ اسی آیت کا دوسرا عمل بھی ہے ۔جس کو آپ کسی بھی حاجت کے لئے کر سکتے ہیں ۔چاہے کوئی بھی حاجت ہو ۔ بڑی پریشانی ہو ۔آپ اس عمل کو کریں گے تو انشاءاللہ اس کی برکت سے حاجت پوری ہوگی ۔ نہایت ہی آسان ہے یہ عمل ۔ یہ عشاء کے بعد کا عمل ہے ۔اس عمل میں آپ نے سورۃ مائدہ کی آیت نمبر 114 کو عشاء کے بعد سونے سے پہلے 500پانچ سو مرتبہ پڑھنا ہے۔ اس عمل کو چلتے پھرتے بھی کیا جا سکتا ہے ۔ایک جگہ بیٹھ کر بھی آپ اس عمل کو کر سکتے ہیں۔ اس عمل کو کرتے وقت ذہن میں اپنی حاجت کا تصور کرنا ہوگا ۔اور دل ہی دل میں اللہ سے دعا کرنی ہوگی۔ یا اللہ اپنے اس کلام کی برکت سے میری حاجت کو پورا فرما ۔اس عمل کی برکت سے انشاءاللہ آپ کی جو بھی حاجت ہو گی وہ ضرور پوری ہوگی ۔اس عمل کو پورے یقین کے ساتھ اللہ پر بھروسہ رکھتے ہوئے اللہ سے جو بھی مانگیں گے وہ مل جائے گا ۔ اگر آپ کا رشتہ نہیں ہو رہا یا آپ کے کاروبار میں کوئی رکاوٹ ہے ۔روزگار میں کسی قسم کی پریشانی ہے۔ کوئی کام آپ کا کسی طرح پھنسا ہوا ہے۔ تو آپ اس وظیفے کو آزمائں۔ ان شاء اللہ تعالی ضرور آپ کی مشکل آسان ہو گئی ۔