بحرین کی جانب سے اسرائیل کو تسلیم کئے جانے پر پاکستان کا بہت ہی سخت   ردعمل ۔مشرق وسطیٰ امن عمل اور فلسطین کے حوالے سے پاکستان کے مؤقف میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔تفصیلات  کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چوہدری نے کہا ہے کہ مشرق وسطیٰ میں امن عمل اور فلسطین کے حوالے سے پاکستان کے مؤقف میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ۔بحرین اسرائیل امن معاہدے کے حوالے سے تبصرہ کرتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ نے کہا مسئلہ فلسطین پر پاکستان کا موقف برقرار ہے۔ مشرق وسطیٰ میں امن و استحکام پاکستان کی تر جیح ہے ۔۔دفتر خارجہ نے کہا کہ فلسطین کے حوالے سے پاکستان کے اصولی موقف میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ۔ہم فلسطینی عوام کے حق میں استصواب رائے سمیت تمام حقوق تسلیم کئے جانے کے عہد پر قائم ہے ۔ایک مستقبل اور طویل المدت قیام امن کے لیے پاکستان ہمیشہ سے دو ریاستی حل کی حمایت کرتا ہے ۔یہ دو ریاستی حل متعلقہ اقوام متحدہ اور او آئی سی  قر ا ر د ا د و ں ،دو بین الاقوامی قوانین کے عین مطابق ہے ۔اس حل کے مطابق  سر حد یں1967 سے قبل   کے حالات کے مطابق ا و ر  القدس شریف فلسطین کا دارالحکومت ہوگا ۔جوتا حالات میں پاکستان کا موقف فلسطینیوں کی خواہشات اور حقوق کی فراہمی کے تناظر میں ہوگا ۔اس مؤ قف کا  انحصا ر  علاقائی امن سلامتی اور ا ستحکا م کو بر قر ا ر ر کھنے   پر بھی ہو گا۔

و ا ضح ر ہے کے گز شتہ ر و ز  خبر سا منے آ ئی تھی کہ متحد ہ عر ب ا ما رات کے بعد  بحرین نے بھی اسرائیل کو تسلیم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس حوالے سے امریکی صدر ٹرمپ نے اعلان کیا کہ تیس دنوں کے دوران2 عر ب  اسلامی ممالک نے اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کیا ۔جو کے بہت اہم پیش رفت ہے ۔