عمران خان کونسے کیے وعدے پورے نہیں کر سکے۔؟ اسد شميم کا بيان۔۔
صحت و تعلیم کے شعبے کا برا حال ہے تحریک انصاف کا رویہ جمہوریت کے منافی ہے ۔قوم کو قرضوں کے بوجھ تلے دبا دیا گیا ہے۔ خیالی پلاؤ سے انویسٹمنٹ نہیں آتی ۔
چیف ایگزیکیٹیو اسد شمیم نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے انتخابی مہم کے دوران جو انقلابی تقریریں کی تھیں اسے انسپائر ہوکر عوام نے کرپٹ اور استحصالی نظام کے خاتمے کے لیے عمران خان کو نجات دہندہ سمجھ کر ان سے بڑی امیدیں وابستہ کرلیں ۔لیکن بدقسمتی سے پونے دو سال کا عرصہ گزرنے کے باوجود وزیراعظم عمران خان عوام سے کیا جانے والا ایک وعدہ بھی پورا نہیں کر سکے گزشتہ روز ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستانی نژاد برطانوی بزنس مین اسد شمیم نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے آئی ایم ایف سے قرض لیکر پوری قوم کو قرضوں کے بوجھ تلے دبا دیا ہے۔ لوگوں کی تنخواہیں نہیں بڑھی البتہ کرپشن اور مہنگائی پہلے سے بھی زیادہ بڑھ گئی ہے۔ تحریک انصاف کی حکومت کے پاس پاکستان کو ترقی اور عوام کو خوشحال بنانے کا کوئی پلین نہیں ہے عمران خان اور ان کی کابینہ کے لوگ خیالی پلاؤ پکارہے ہیں جبکہ خیالی پلاؤ سے انویسٹمنٹ نہیں آتی ہے۔
انہوں نے مزيد کہا ہے کہ تعلیم کے شعبے کا برا حال ہے تحریک انصاف کی حکومت بھی ماضی کے حکمرانوں کی طرح اپنوں کو نوازنے میں لگی ہوئی ہے عمران خان جن لوگوں کے پیسوں سے الیکشن لڑا اور وزیراعظم بن کر انہیں لوگوں کو فائدہ پہنچا رہے ہیں جب بھی کوئی شخص حکومت پر تنقید کرتا ہے تو تحریک انصاف کے وزیر عہدیدار اور کارکن اصلاح کرنے کی بجائے الٹا اسے گالیاں دینا شروع کر دیتے ہیں ۔
عمران خان کی کابینہ اور تحریک انصاف کے عہدیداروں کا رویہ جمہوریت کے منافی ہے انہوں نے کہا کہ قوم کو بیوقوف بنایا جا رہا ہے ہے۔ عوام کو چاہيے کہ اب مزيد بیوقوف نہ بنے اور اپنے اور پاکستان کے مستقبل کو روشن بنانے کے لئے آگے بڑھ کر احتسالی قوتوں کا راستہ روکے۔
انہوں نے مزید کہا جس طرح کے جاھل اور کرپٹ لوگ اس حکومت کا حصہ ہے اس ملک کو تباہی اور دیوالیہ پن سے کوئی نہیں روک سکتا۔