حکومت کا ملک کا سب سے منافع بخش سرکاری ادارہ ملائیشیا کو فروخت کرنے کا فیصلہ :
ملائيشين حکومت کا او جی ڈی سی ایل کے شیئر خریدنے کی پیشکش ملائيشين کمپنیوں کو پاکستان ميں درآمدی گیس ایل پی جی اور آئل ريفائنری کے شعبے میں سرمایہ کاری کی دعوت بھی دی گئی ۔
حکومت کا ملک کا سب سے منافع بخش سرکاری ادارہ ملائیشیا کو فروخت کرنے کا فیصلہ کر ليا گيا ۔
تفصيلات کے مطابق حکومت پاکستان نے ملائيشين حکومت کو دعوت دی ہے کہ تيل اور گیس کے شعبے میں سرمایہ کاری کی جائے۔
بتايا جارہا ہے کہ حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ ملائيشيا کو پیشکش کی جائے گی کہ او جی ڈی سی ایل کے شیئر خرید جائیں ممکنا طور پر ملائیشیا کو او جی ڈی سی ایل کے ساتھ 75 خریدنے کی پیشکش کی جائے گی۔ اس کے علاوہ ملائیشین کمپنیوں پاکستان میں درآمدی گيس، ایل پی جی،آئل ريفانری کے شعبے میں سرمایہ کاری کی دعوت بھی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان کے اگلے شیڈول ملائیشیا کے دورے کے دوران پیش کیے جائیں گے اس حوالے سے ملائیيشن وفد نے وفاقی وزیر برائے توانائی عمر ایوب اور معاون خصوصی پیٹرولیم سے ملاقات کی ہے۔ جس میں وزیراعظم عمران خان کے آئندہ ماہ دورہ ملائیشیا پر گفتگو کی گئی۔
ملاقات ميں پيروليم کے شعبے ميں ہونے والی اصطلاحات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ عمرایوب کا کہنا تھا کہ پاکستان کی انرجی میں قابل تجدید توانائی کے شعبے میں خاطر خواہ اضافہ ہو رہا ہے۔ پاکستان توانائی کے شعبے میں سرمایہ کاری کو فروغ دینے کا خواہش مند ہے وزیر توانائی نے مزيد کہا کہ ملک میں موجود تیل اور گیس کے ذخائر کی تلاش اور پیداوار بڑھا دی گئی ہے انہوں نے کہا کہ ملائیشین کمپنیاں کو پاکستان میں درآمدی گیس ،ایل پی جی ، آئل ریفائنری کے شعبے میں سرمایہ کاری کی دعوت دیتے ہیں ۔مزید کہا گیا کہ ملائیشین کمپنیوں کو رواں سال ہونے والی آئل اور گيس کی نيلامی میں حصہ لینے کی دعوت دیتے ہیں۔
اس حوالے سے ملائیشين ہائی کمشنر نے کہا کہ ملائیشیا توانائی کے شعبے میں پاکستان کے ساتھ تعاون کو فروغ دے گا ۔ ملائيشين ہائی کمشنر نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کے ملائیشیا کے دورے سے پاکستان اور ملائیشیا کے مابین معاشی اور سفارتی تعلقات مزید مضبوط ہوجائے