اسرائیل کو تسلیم کر کے غلطی کی ، یو اے ای نے پہلی میٹنگ منسوخ کردی

0
1971

یو اے ای  اسرائیل تعلقات بناتے ہیں تناؤ کا شکار ہو گیا  اسرائیل کی جانب سے امریکہ اور متحدہ عرب امارات کے درمیان طیاروں کے معاہدے کی اسرائیل نے مخالفت کر دی جس پر اسرائیل کو تسلیم کرنے والے متحدہ عرب امارات نے رد عمل دیتے ہوئے اسرائیلی حکام سے طے شدہ پہلی باضابطہ ملاقات منسوخ کر دی ہے متحدہ عرب امارات اسرائیل اور امریکی حکام ملاقاتوں جمعہ  کو ہونا تھی لیکن اس سے قبل اسرائیلی وزیراعظم نتن یاہو نے امریکی ایوان اے ڈیل کی مخالفت کردی ہے بین الاقوامی منظرنامے پر نظر رکھنے والوں کا کہنا ہے کہ ملاقات کی منسوخی یو اے ای کیجانب سے نتین یاہو کو پیغام ہے کہ داخلی معاملات میں کسی کی مداخلت قبول نہیں کی جائے گی ٹرمپ انتظامیہ متحدہ عرب امارات کو F – ٣٥ طیارے فروخت  کرنے کی خواہشمند ہے اسرائیل کے وزیر اعظم نے یو اے ای کو طیاروں کی فروخت وقت کی مخالفت کی تھی اس وقت اسرائیل اس وقت مشرق وسطی کی واحد ریاست ہے جس کے پاس جنگی طیارے ہیں موساد کے ڈائریکٹر نے  نے امریکہ کی جانب سے متحدہ عرب امارات کو لڑاکا طیاروں کی فروخت کی مخالفت کی تھی  موساد کے ڈائریکٹر  نے اسرائیل کے  چینل  سے گفتگو کرتے ہوئے متحدہ عرب امارات کو امریکہ کے ایف تھنڈر لڑاکا طیاروں کی فروخت سے متعلق اسرائیلی کابینہ کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اسر ائیل ہر قسم کے ہتھیا روں کی فروخت کا مخالف ہے جو علاقے میں اس کی برتری کے لیے خطرے کا باعث بنے. اب دیکھنا یہ ہے کہ یہ حالات دونو ملکوں کے مابین ہونے والے ماہدے پر اثر انداز ہوتے ہیں یا نہیں. اسرائیل کا مقصد خود کو خود کو  مضبوط اور دوسرے ممالک کو کمزور رکھنا ہے تا کہ مستقبل میں کوئی بھی اسکو چیلنج نہ کر سکے.